امام مہدی رحمة الله عليه کا ظہور اورظالم بشار الاسد،کیا قیامت قریب آ چکی ہے؟

امام مہدی رحمة الله عليه کا ظہور اورظالم بشار الاسد،کیا قیامت قریب آ چکی ہے؟


امام مہدی رحمة الله عليه کا ظہور اورظالم بشار الاسد،کیا قیامت قریب آ چکی ہے؟

امام مہدی رحمة الله عليه کا ظہور کیا نذدیک ہے اور جو نشانیاں بتائی گئی ہیں قرب قیامت کی وہ پوری ہو چکی ہیں یہ پڑھنے کے بعد آپ کے رونگٹے کھڑے ہو جائیں گے لیکن یہ بات بہت کم لوگ جانتے ہیں کہ امام مہدی سے پہلے سفیانی نامی حکمران کے ظہور کی پیشنگوئیاں بھی موجود ہیں جو درحقیقت امام مہدی کا دشمن ہو گا۔ اسلئے ہم کہہ سکتے ہیں کہ امام مہدی کا ظہور سفیانی (اپنے دشمن) کے ظاہر ہونے کے کچھ ہی سالوں بعد ہو گا۔

سفیانی کے ظہور کہ بارے میں ایک حدیث ملاحظہ کیجیے:

(حديث مرفوع) حَدَّثَنَا أَبُو مُحَمَّدٍ أَحْمَدُ بْنُ عَبْدِ اللَّهِ الْمُزَنِيُّ ،ثَنَا زَكَرِيَّا بْنُ يَحْيَى السَّاجِيُّ ، ثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ إِسْمَاعِيلَ بْنِ أَبِي سَمِينَةَ ، ثَنَا الْوَلِيدُ بْنُ مُسْلِمٍ ، ثَنَاالأَوْزَاعِيُّ ، عَنْ يَحْيَى بْنِ أَبِي كَثِيرٍ ، عَنْ أَبِي سَلَمَةَ ، عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ رَضِيَ اللَّهُ عَنْهُ ، قَالَ : قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَآَلِهِ وَسَلَّمَ : ” يَخْرُجُ رَجُلٌيُقَالُ لَهُ : السُّفْيَانِيُّ فِي عُمْقِ دِمَشْقَ ، وَعَامَّةُ مِنْ يَتْبَعُهُ مِنْ كَلْبِ ، فَيَقْتُلُ حَتَّى يَبْقَرَ بُطُونَ النِّسَاءِ ، وَيَقْتُلُ الصِّبْيَانَ ، فَتَجْمَعُ لَهُمْ قَيْسٌ ، فَيَقْتُلُهَا حَتَّى لا يُمْنَعُذَنَبَ تَلْعَةٍ ، وَيَخْرُجُ رَجُلٌ مِنْ أَهْلِ بَيْتِي فِي الْحَرَّةِ ، فَيَبْلُغُ السُّفْيَانِيَّ ، فَيَبْعَثُ إِلَيْهِ جُنْدًا مِنْ جُنْدِهِ ، فَيَهْزِمُهُمْ ، فَيَسِيرُ إِلَيْهِ السُّفْيَانِيُّ بِمَنْ مَعَهُ ، حَتَّى إِذَاصَارَ بِبَيْدَاءَ مِنَ الأَرْضِ ، خُسِفَ بِهِمْ ، فَلا يَنْجُو مِنْهُمْ إِلا الْمُخْبِرُ عَنْهُمْ ” .
هَذَا حَدِيثٌ صَحِيحُ الإِسْنَادِ عَلَى شَرْطِ الشَّيْخَيْنِ ، وَلَمْ يُخْرِجَاهُ(بحوالہ: مستدرک حاکم)

ترجمہ:
“دمشق(ملک شام) کی گہرائی سےایک آدمی نکلے گا جسے سفیانی کہا جائے گا، اسکی پیروی کرنے والے زیادہ تر لوگ کلب قبیلےکے ہوں گے، یہ عورتوں کے پیٹ چاک کر کے لڑکوں کو قتل کرے گا، قیس قبیلے کے لوگ اسکا مقابلہ کریں گے، یہاں سے لڑے گا اور وہاں سے روک نہیں سکیں گے،
پھر میرے گھرانے کا ایک آدمی (یعنی امام مہدی رحمة الله عليه) حرّہ پہنچے گا،
جب سفیانی کو پتہ چلے گا تو وہ اپنے لشکروں میں سے ایک لشکر بھیجے گا، جسے مہدی شکست دے گا، پھر سفیانی کے ساتھ جو لوگ بھی ہوں گے انہیں مہدی کیطرف بھیجےگا، جب وہ صحرا والی زمین پر پہنچیں گے تو زمین انہیں نگل لے گی، ان میں سے کوئی نہ بچے گا سوائے خبر دینے والے کے۔”

آپ کو ہماری پوسٹ پسند آئی تو اپنے دوستوں کیساتھ شئیر کیجئیے

Leave a Reply