اگر ایک ٹائم میں زیادہ مقدار میں ویاگرہ گولیاں کھا لی جائیں تو کیا ہوتا ہے؟ انتہائی اہم معلومات پڑھیں

اگر ایک ٹائم میں زیادہ مقدار میں ویاگرہ گولیاں کھا لی جائیں تو کیا ہوتا ہے؟ انتہائی اہم معلومات پڑھیں

ویاگرا گولی مردوں میں بہت مقبولیت کی حامل ہے. یہ گولی مرد حضرات اپنی ٹائمنگ اور طاقت بڑھانے کے لیے استعمال کرتے ہیں. ویاگرا گولی کھاتے ہی اسکے اندر موجود ایک اہم اجزاء جسے (slidnafil) کہتے ہیں، ہمارے جسم میں 30 منٹ کے اندر اندر شامل ہو جاتا ہے اور اپنا اثر دکھانا شروع کر دیتا ہے. یہ اجزاء مرد کے نفس میں خون کا بہاؤ بڑھا دیتا ہے جس سے سختی بڑھتی ہے اور مردانہ ٹائمنگ میں بے پناہ حد تک اضافہ ہو جاتا ہے.


لیکن اگر مرد ایک ٹائم میں زیادہ ویاگرا گولیاں کھالے تو پھر کیا اسے زیادہ طاقت ملے گی؟

ایک ہی ٹائم میں زیادہ ویاگرہ گولیاں کھانے سے نفس لوہے کی طرح مضبوط تو ہو جائیگا لیکن ایسا کرنا ہر گز صحیح نہیں ہے. طبی ماہرین کے مطابق جو لوگ ایک ہی ٹائم میں زیادہ گولیاں کھالیتے ہیں انکی ٹائمنگ میں حد سے زیادہ اضافہ ہو جاتا ہے یعنی 4-5 گھنٹے تک نفس ڈھیلا نہیں پڑھتا اور نہ ہی انزال ہو پاتا ہے جسکی وجہ سے عضو تناسل میں شدید درد ہونے لگتی ہے اور انزال نہ ہونے کے باعث بندے کا پورا بدن کھچ جاتا ہے اور بار بار ایسا لگتا ہے جیسے ابھی انزال ہو جائیگا لیکن وہ ہوتا نہیں. انسان اس عجیب و غریب کیفیت میں 5-4 گھنٹے تک مبتلا رہتا ہے اور بعض اوقات 10 10 گھنٹے بھی یہ پریشانی آپکے ساتھ رہتی ہے.

اس میں نفس کے پٹھے یعنی (muscles) بھی کھچ جاتے ہیں اور بعض اوقات اس میں سوجن اور خون کا بہاؤ اتنا تیز ہوجاتا ہے کہ ناقابل برداشت درد ہونے لگتا ہے. اس صورت میں جو مریض ڈاکٹر کے پاس آتے ہیں تو ڈاکٹر ان مریضوں کی سرجری کرتے ہیں جہاں پر انکے نفس کی طرف خون کا بہاؤ روکا جاتا ہے.

ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ ایک دن میں صرف ایک ویاگرا گولی ہی کھانی چاہیے، اس سے زیادہ کھانا خطرناک ثابت ہو سکتا ہے.

ہماری اس پوسٹ کا مقصد صرف آپ لوگوں کے علم میں اضافہ کرنا ہے اور آپ لوگوں کو پریشانیوں سے بچائے رکھنا ہے. کافی نوجوان زیادہ مقدار میں ویاگرہ گولیاں کھا کر اپنے نفس کو نقصان پہنچا دیتے ہیں کیونکہ انکو علم نہیں ہوتا. اس لیے ہماری اس پوسٹ کو لائق کریں اور مناسب لوگوں کے ساتھ شئیر ضرور کریں.

Leave a Reply