نوجوان لڑکا لڑکی جنہیں دنیا بھر کے ہوٹل اپنے پاس بلا کر یہ شرمناک کام کرنے کے پیسے دیتے ہیں، کمائی کا ذریعہ جان کر آپ کا بھی منہ شرم سے لال ہو جائے گا

نوجوان لڑکا لڑکی جنہیں دنیا بھر کے ہوٹل اپنے پاس بلا کر یہ شرمناک کام کرنے کے پیسے دیتے ہیں، کمائی کا ذریعہ جان کر آپ کا بھی منہ شرم سے لال ہو جائے گا

لگژری ہوٹلز کسی کو مفت اپنے گیٹ کے سامنے سے نہ گزرنے دیں لیکن برطانیہ کا ایک نوجوان جوڑا ایسا ہے جسے دنیا بھر کے لگژری ہوٹل خود بلاتے ہیں اور اپنے ہاں ٹھہرنے کے عوض پیسے بھی دیتے ہیں۔ بدلے میں یہ جوڑا ان کے لیے ایسا شرمناک کام کرتا ہے کہ آمدنی کے اس ذریعے کے متعلق جان کر آپ کے گال شرم سے لال ہو جائیں گے۔

میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق 25سالہ جسٹن اینجلکے اور اس کی 23سالہ گرل فرینڈ جیسیکا ڈی ارجنٹ لگژری انٹرنیٹ پر اپنی سفر کی داستان صارفین کو سناتے ہیں اور اس داستان میں وہ مختلف ہوٹلوں میں اپنے جنسی تعلق کے تجربے کے بارے میں بھی بتاتے ہیں کہ کس ہوٹل میں انہیں جنسی تعلق استوار کرنا کیسا لگا اور اس شرمناک کام کے لیے کس ہوٹل کا ماحول کتنا سازگار اور بہتر تھا۔ چنانچہ ان کا بلاگ بہت معروف ہو چکا ہے اور اب دنیا بھر کے لگژری ہوٹلوں کی انتظامیہ انہیں اپنے ہوٹل کی تشہیر کے لیے بلاتی ہے اور انہیں مفت رہائش اور خاطرخواہ رقم بھی دیتی ہے۔

رپورٹ کے مطابق جسٹن اور جیسیکا اب تک مغربی و یورپی ممالک کے درجنوں لگژری ہوٹلوں میں جا چکے ہیں۔ان کا کہنا ہے کہ ”ہم ہر ہوٹل میں قیام کے بعد وہاں جنسی تعلق کے تجربے کے متعلق اپنے الگ الگ خیالات قلمبند کرتے ہیں اور جوڑوں کو بتاتے ہیں کہ بہترین جنسی تعلق کے لیے سب سے بہتر ہوٹل کون سا ہے۔ ہم گزشتہ 6سال سے ایک ساتھ رہ رہے ہیں اور یہ کام کر رہے ہیں جس میں ہم صرف اپنی جنسی زندگی کے متعلق ہی نہیں لکھتے بلکہ ہوٹلوں کا تنقیدی جائزہ بھی ہماری تحاریر میں شامل ہوتا ہے۔“

 

Leave a Reply