10 سالہ لڑکی اور 35 سالہ آدمی سے نکاح کر دیا .سہاگ رات کو وہ ہوا جس کے بعد مرد کبھی شادی نہیں کرے گا

10 سالہ لڑکی اور 35 سالہ آدمی سے نکاح کر دیا .سہاگ رات کو وہ ہوا جس کے بعد مرد کبھی شادی نہیں کرے گا

مسلح افراد نے دس سالہ لڑکی کا نکاح زبردستی 35 سالہ شخص کے ساتھ کردیا۔ لڑکی کی والدہ نے احتجاج کر تے رخصتی سے انکار کر دیا تو ملزموں نے تشدد کا نشانہ بناکر۔ مگر دوستو عورت کوئی کھیلنے کی چیز نہیں ہے کہ جب جس کا دل کرے عورت کو استعمال کر کے اور اس کی عزت کے ساتھ کھیل کر اس کو چھوڑ دے .ایسی طرح یہ کیس چند جاہل لوگوں کا ہے جو صرف اپنی ہوس کو مٹانے کے لئے ایک معصوم دس سالہ لڑکی کو شادی کے لئے استعمال کر رہے ہیں یہ عمر تو اس ننی لڑکی کے کھیلنے کے دن میں مگر اس کے ساتھ تو کچھ اور ہی ظلم ہو رہا ہے

اس کے سر اور آنکھوں کے بال کاٹ کر اسے ایک ماہ تک کمرے میں قیدرکھا اور اسے تشدد کا نشانہ بناتے رہے ۔ تفصیلات کے مطابق نواحی قصبہ اے 5 فورا یل کی غلام فاطمہ دختر محمد شریف کی دس سالہ بیٹی بختاوربی بی کا نکاح محمد بشیر، موسیٰ اور کمیر عرف کمبی نے گن پوائنٹ پر 35 سالہ طارق سے کردیا ۔ غلام فاطمہ نے احتجاج کرتے رخصتی سے انکار کر دیا تو ملزموں نے تشدد کرتے اس کے سر اور آنکھوں کے بال کاٹ کر اسے کمرے میں قید کر دیا اور تشدد کرتے رہے۔ ایک ماہ بعد چیخ وپکار کی آواز سن کراہل دیہہ آگئے جنہوں نے اسے رہائی دلائی ۔ پولیس تھانہ صدر اوکاڑہ نے مقدمہ درج کر کے ملزموں کی گرفتاری کے لئے چھاپے مارنے شروع کر دئیے ہیں

Leave a Reply