’’نابینا حکیم نے جونہی رانی کی نبض پر ہاتھ رکھاتو۔ ۔ ۔‘‘ ایک انتہائی مشہور حکیم کا حیرت انگیز واقعہ جس نے ہر کسی کو دنگ کردیا

’’نابینا حکیم نے جونہی رانی کی نبض پر ہاتھ رکھاتو۔ ۔ ۔‘‘ ایک انتہائی مشہور حکیم کا حیرت انگیز واقعہ جس نے ہر کسی کو دنگ کردیا

لاہور(قدرت روزنامہ 10دسمبر 2017)مسلمان اطبا نے ہر دور میں اپنے فن کی سچائی سے دنیا کو حیران کئے رکھا ہے ،اگرچہ اب قحط الرجال ہے لیکن تاریخ طب ایسے حاذق نباض کے احوال سنا کر اس فن کی صداقت کو قائم و دائم رکھے ہوئے ہے .’’ہندوستان کے نامور اطبا‘‘ میں ایک ایسے طبیب کا ذکر کیا گیا ہے جو نابینا تھے لیکن مریض کی نبض انہیں ہر مرض کی اصلیت دکھا دیتی اور وہ یہ بھی دیکھ لیتے کہ یہ نبض کس فرد کی ہے.

یہ برصغیر کے نامور حکیم عبدالوہاب انصاری المعروف حکیم نابینا تھے، جن کا نام بڑے عزت احترام سے لیا جاتا ہے.

فن طبابت پر ان کی دسترس کے بارے میں خواجہ حسن نظامی اپنے ۱۳ ستمبر ۱۹۲۴ء کے روزنامچہ میں لکھا کہ حکیم نابینا صاحب مہاراج سرکش پر شار کے بچوں کے نبض دیکھنے کوٹھی تشریف لے گئے ،میں حیران رہ گیا کہ رانیوں اور بیگمات اور بچوں کی نبض دیکھنے کے بعد حکیم صاحب نے کسی کا حال نہیں پوچھا. خود ہی ہر بیمار کی مفصل کیفیت نبض دیکھ کر بتا دی اور ہر بیمار نے تصدیق کی کہ بیشک یہی حال ہے. اس وقت مہارا جہ نے ایک قصہ بیان کیا کہ ایک دفعہ حیدر آباد میں ان حکیم صاحب کو میں نے اپنے گھر بلایا. رانی صاحبہ کی نبض دکھائی تھی مگر بجائے رانی صاحبہ کے میں نے نبض دکھا دی. حکیم صاحب نے نبض دیکھتے ہی مسکرا کر فرمایا’’یہ نبض تو مہاراج کی ہے‘‘ میں نے اپنی زندگی میں ایسا کمال کسی طبیب میں نہیں دیکھا.‘‘

..

Leave a Reply