’ اوئے تو ہماری لڑکی کو ۔۔۔‘ پاکستانی خاندان والوں نے 16 سالہ لڑکے کو برطانیہ کی سڑک پر ہی پکڑ لیا، مار مار کر بھرکس نکال دیا، لیکن پھر کیا ہوا؟ جان کر کوئی پاکستانی کبھی غلطی سے بھی باہر ایسا کام نہ کرے

’ اوئے تو ہماری لڑکی کو ۔۔۔‘ پاکستانی خاندان والوں نے 16 سالہ لڑکے کو برطانیہ کی سڑک پر ہی پکڑ لیا، مار مار کر بھرکس نکال دیا، لیکن پھر کیا ہوا؟ جان کر کوئی پاکستانی کبھی غلطی سے بھی باہر ایسا کام نہ کرے

لندن (نیوز ڈیسک) برطانیہ میں مقیم ایک پاکستانی خاندان نے اپنی لڑکی سے چھیڑ چھاڑ کرنے والے بنگالی نژاد طالبعلم کو دبوچ لیا اور اس پر اتنا تشدد کیا کہ لڑکا ہسپتال میں اسے مارنے والے عدالت پہنچ گئے۔

دی مرر کے مطابق پریسٹن کراﺅن کورٹ کو بتایا گیا کہ بنگالی لڑکا اور پاکستانی لڑکی سکول میں اکٹھے پڑھتے ہیں ۔رپورٹ کے مطابق لڑکی کے چچا نے اسے بنگالی لڑکے کے ساتھ سڑک پر گھومتے پھرتے دیکھ لیا تھا۔ وہ زبردستی اسے گاڑی میں بٹھا کر اپنے ساتھ لے گیا اور بعد میں خاندان کے دیگر افراد بھی پہنچ گئے۔ ان سب نے مل کر لڑکے کو مارنا شروع کر دیا اور اتنا مارا کہ وہ ادھ موا ہو گیا۔

عدالت کو بتایا گیا کہ لڑکے پر تشدد کے دوران وہ کہتے رہے’ ’ ہماری لڑکی کے ساتھ چھیڑ چھاڑ کرتا ہے! جاﺅ کوئی اپنی نسل کی ڈھونڈو! “ اس واقعے کے بعد لڑکا اتنا خوفزدہ ہو گیا ہے کہ اب وہ سکول جانے سے بھی انکاری ہے ، بلکہ سکول کا نام سن کر ہی ڈر جاتا ہے ۔

لڑکی والوں نے بھی پہلے جی بھر کے لڑکے پر تشدد تو کر لیا لیکن اب پچھتا رہے ہیں۔ تشدد کے الزام میں لڑکی کے بھائی خضر بیگ ، کزن ثاقب مرزا ، غضنفر مرزااور چچا مرزا بیگ کے خلاف پریسٹن کی عدالت میں مقدمہ چلایا گیا اور سب ملزمان کو طویل قید کی سزا متوقع ہے۔ عدالت میں وہ خود پر لعن طعن کرتے ہوئے اپنے کئے کو حماقت قرار دے کر آنسو بہاتے رہے، لیکن جج کا کہنا تھا کہ جو کیا ہے اس کا نتیجہ بھگتنا پڑے گا۔

Leave a Reply