’میرے شوہر کا کہنا ہے میں بہت غلیظ ہوں کیونکہ میں نہاتے ہوئے اپنے جسم کا یہ حصہ کبھی نہیں دھوتی‘ خاتون نے انٹرنیٹ پر ایسی بات کہہ دی کہ طوفان آگیا

’میرے شوہر کا کہنا ہے میں بہت غلیظ ہوں کیونکہ میں نہاتے ہوئے اپنے جسم کا یہ حصہ کبھی نہیں دھوتی‘ خاتون نے انٹرنیٹ پر ایسی بات کہہ دی کہ طوفان آگیا

اگر آپ نہانے کے لئے واش روم جا ہی پہنچے ہیں، اور اپنا سر، گردن اور باقی جسم بھی دھو لیا ہے تو پھر پاﺅں دھونے میں کیا قباحت ہے؟بظاہر تو یہ بات لایعنی محسوس ہوتی ہے کہ سارا جسم دھو کر صرف پاﺅں چھوڑ دئیے جائیں

لیکن ایک محترمہ کو پاﺅں نا دھونے کی عادت ایسی عزیز ہے کہ وہ اس بات پر بضد ہیں کہ کبھی اپنے پاﺅں نہیں دھوئیں گئی۔ ویب سائٹ ’ممز نیٹ‘ پر اپنی اس عجیب و غریب عادت کا تذکرہ کرتے ہوئے اس خاتون کا کہنا تھا ” میں جب بھی نہانے کے لئے جاتی ہوں تو بالوں سمیت باقی سارا جسم دھو لیتی ہوں لیکن اپنے پیر نہیں دھوتی ہوں۔

میرا خاوند میری اس حرکت پر بہت برہم ہوتا ہے اور مجھے غلیظ کہتا ہے، لیکن کیا پاﺅں نا دھونا کوئی غلط بات ہے؟ جب میں باقی سارا جسم دھوتی ہوں تو صابن اور بہت سا پانی میرے پیروں کے اوپر سے بھی گزرتا ہے۔ کیا وہ خود ہی صاف نہیں ہو جاتے؟ بھلا اس کے بعد انہیں مزید دھونے کی کیا ضرورت ہے؟

“اس خاتون نے اپنا یہ مسئلہ انٹرنیٹ پر بیان کر کے سوشل میڈیا صارفین کے درمیان نئی بحث چھیڑ دی ہے۔ دلچسپ بات یہ ہے کہ بہت سی خواتین اس خاتون کے حق میں آگے آ گئی ہیں۔ ایک ایسی ہی خاتون کا کہنا تھا ”میں آپ کے ساتھ ہوں۔ یہ بات ٹھیک ہے کہ نہانے کے دوران پیروں پر سے اتنا پانی گزرتا ہے کہ انہیں مزید دھونے کی ضرورت نہیں رہتی۔“

ایک اور کا کہنا تھا ”پاﺅں دھونے کی کوشش میں ایک بار میں پھسل کر گر گئی تھی۔ بس اس کے بعد میں تو کبھی بھی پیر دھونے کی کوشش نہیں کرتی۔“ اسی طرح ایک اور خاتون نے کہا ”اگر میں سارا دن کیچڑ میں پھرتی رہوں تو پاﺅں دھونے کی وجہ سمجھ آتی ہے ورنہ اس کی کوئی ضرورت نہیں۔“

Leave a Reply